تحریک لبیک پاکستان کا لانچ مارچ کا اعلان

تحريک لبيک پاکستان نے کل (جمعہ) سے وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کی طرف لانگ مارچ کا اعلان کرديا۔

کالعدم مذہبی و سیاسی جماعت کے کارکن 2 دن سے يتيم خانہ چوک پر دھرنا دیئے بيٹھے ہيں، مرکزی شوریٰ نے مطالبات منظور نہ ہونے پر آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کيا تھا۔

کالعدم ٹی ایل پی شوریٰ کے مطابق کارکن نماز جمعہ کے بعد اسلام آباد کی طرف لانگ مارچ کیلئے روانہ ہوں گے۔

رواں سال اپریل میں ٹی ایل پی سربراہ سعد حسین رضوی کو حراست میں لیا گیا اور تنظیم کو کالعدم قرار دیدیا گیا تھا۔

ترجمان پنجاب حکومت

ترجمان پنجاب حکومت حسان خاور نے سماء کے پروگرام 7 سے 8 میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ قانون کے دائرے میں چلنے والا ہمارے لئے مسئلہ نہیں، حکومت صورتحال کا جائزہ لے رہی ہے، حکومت قانون اور آئین کے دائرے میں قدم اٹھائے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ مطالبات کے حق میں پُرامن احتجاج میں کوئی حرج نہیں، کوئی قانون کو ہاتھ ميں لے گا تو يہ منظور نہيں، حکومت مذاکرات کیلئے ہر وقت تیار ہے۔

لاہور میں حالیہ احتجاج اور صورتحال

لاہور میں ملتان روڈ پر کالعدم تحریک لبیک پاکستان کا کئی روز سے جاری احتجاج دھرنے میں تبدیل ہوگیا، جماعت کی مرکزی شوریٰ نے حکومت کو مطالبات پر عملدرآمد کیلئے 2 روز کا الٹی میٹم دیا تھا اور کہا گیا تھا کہ مطالبات نہ مانے گئے تو آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کریں گے۔

لاہور میں احتجاج کیلئے ملتان روڈ پر کالعدم ٹی ایل پی کے مرکز کے سامنے اسٹیج بنایا گیا ہے، جہاں سیکڑوں کی تعداد میں ٹی ایل پی ورکرز موجود ہیں، جس کے نتیجے میں اطراف کی کئی سڑکیں ٹریفک کیلئے مکمل طور پر بند ہیں

قانون نافذ کرنیوالے اداروں نے بھی کئی سڑکوں کو کنٹینر اور ٹرک لگا کر بند کردیا ہے، جن میں یتیم خانہ چوک سے بند روڈ، سوڈیوال اسٹاپ، تھانہ نواں کوٹ والی گلی، مین ملتان روڈ اور مرکز کے اطراف کی تمام محلقہ گلیاں شامل ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *